Sunday, July 8, 2018

Patola پٹولہ

Fun Fact:

When Zulfiqar Ali Bhutto visited Tulamba, his congregation there was organized by a local representative of his party, namely Din Muhammad Patola. In Jaangli, silken cloth is called Patola. As that person was a cloth merchant, therefore Patola was part of his full name. In that era, dolls were made for little girls using silken cloth i.e. Patola.

As the Time went by, those dolls faded away; the word Patola, however, remained in business-being used as a slang to describe attractive girls. You'd have heard this word if you listened to recent song Patola by Guru Randhawa in which Bohemia has mentioned Multan too. So now you know the history of the word Patola and its meaning/purpose in the song. 


ذوالفقار علی بھٹو جب تلمبہ آئے تو وہاں ان کے جلسے کا انتظام جن صاحب نے کیا تھا، ان کا نام دین محمد پٹولہ تھا۔ پٹولہ جانگلی میں ریشمی کپڑے کو کہتے ہیں۔ چونکہ وہ صاحب کپڑے کے تاجر تھے چنانچہ نام کے ساتھ پٹولہ لگاتے تھے۔ اس زمانے میں لڑکیوں کے کھیلنے کے لیے اس ریشمی کپڑے یعنی پٹولے سے گڑیاں بنائی جاتی تھیں۔ وقت کے ساتھ وہ گڑیاں تو ختم ہونے لگیں تاہم حسن پرست لوگوں نے دوشیزاؤں کے لیے پٹولے یعنی گڑیا کا لفظ استعمال کرنا شروع کر دیا۔ اگر آپ نے حالیہ دنوں میں گرو رندھاوا کا مشہور گانا پٹولہ سنا ہے جس میں بوہیمیا نے ملتان کا ذکر بھی کیا ہے، تو آپ کو معلوم ہو جائے گا کہ اس گانے میں دوشیزہ کے لیے پٹولے کا لفظ کیوں استعمال کیا گیا ہے۔

No comments:

Post a Comment

Patola پٹولہ

Fun Fact: When Zulfiqar Ali Bhutto visited Tulamba , his congregation there was organized by a local representative of his party, namely...